Usman Dar

وزیراعظم عمران خان نے پہلے بھی عالمی برادری کو خبردار کیا تھا کہ بھارت میں اس وقت ہندوتوا نظریئے کی حامی جماعت کی حکومت ہے جو اقلیتوں اور خاص طور پہ مسلمانوں سے نفرت کرتی ہے۔
آج بھارت میں مسلمانوں کا قتل عام ہو رہا ہے اور سرکار روکنے کے بجائے خود شامل ہے۔

دہلی کے علاقے جعفرآباد میں پرامن احتجاج 22 تاریخ سے ہو رہا تھا پھر 24 تاریخ کو حکومتی جماعت بی جے پی کے رہنماء کُودے اور فسادات شروع ہوئے جس کے نتیجے میں مسلمانوں کی ہلاکتیں اور مساجد پہ حملے ہوئے۔

پاکستان کیخلاف بیان دلوانے کی بھارتی کوششیں ناکام ہو گئیں،
بھارتی صحافی کیجانب سے وہی روایتی الزامات دوہرانے پہ امریکی صدر کو بھارتی صحافی کو جواب
"وزیراعظم عمران خان میرے اچھے دوست ہیں کشمیر پر مفاہمت کرانے کو تیار ہوں"

۱۰۰ سفارت خانے اور سو سفارتکار بھی ہوتے تو پاکستان کا یہ تشخص نہ بنا پاتے جو تشخص آج وزیراعظم عمران خان کی وجہ سے اُبھرا ہے۔

قمر زمان کائرہ اعتراف کر رہے ہیں کہ پیپلزپارٹی امریکیوں کے ساتھ اریجنمنٹ کر کے اقتدار میں آئی تھی۔
ن لیگ اور پیپلزپارٹی چونکہ سلیکٹ ہوتی آئی ہیں اسلئے انہیں لگتا ہے کہ تحریک انصاف بھی سلیکٹڈ ہے۔

Load More...